ظہار

ظہار کے معنی یہ ہیں کہ کسی مرد کا  اپنی زوجہ یااس کے کسی جز و  کو ایسی عورت سے تشبیہ دینا جو اس مرد پر ہمیشہ کے لیے حرام ہو یا اس کے کسی ایسے عضو سے تشبیہ دینا جس کی طرف دیکھنا حرام ہو مثلایہ کہنا کہ ،  تم مجھ پر میری ماں کی مثل ہو یا تیرا  سر یا تیری گردن  یا تیرا نصف میری ماں کی پیٹھ کی مثل ہے۔   ظہار کے لفظ ادا کرنے کے بعد مرد کفارہ ادا کیے بغیرا پنی بیوی کے ساتھ جماع نہیں کر سکتا اور نہ ہی کوئی ایسا عمل جس سے شہوت پیدا ہو۔

اپنی بیوی کو غلطی سے ماں کہنے کی کوئی سزا نہیں مگر ایسا کہنا مکروہ ہے۔

قرآن پاک کی روشنی میں ظہار کے مرتکب شخص کے لئے  ظہار کا کفارہ ایک غلام آزاد کرنا ہے اور اگر نہ کر سکے تو دو مہینے کے لگاتار روزے رکھے اور اگر یہ بھی نہ کر سکے توساٹھ مسکینوں کو پیٹ بھر کر کھانا کھلائے۔

قرآن و سنت، اور فقہی مسائل کی رو سے ظہار کا مرتکب جب تک ظہار کا کفارہ ادا نہیں کرتا تب تک اپنی بیوی کے قریب نہی جا سکتا نہ جماع کر سکتا ہے۔