روزہ کا کفارہ اور فدیہ

ارشاد باری تعالیٰ ہے:

ترجمہ:۔ اور جنہیں اس کی(روزہ کی) طاقت نہ ہو تو وہ بدلہ دیں ایک مسکین کا کھانا۔

 روزہ کے فدیہ کا حکم تب لازم ہے جب کوئی ایمان والا دائمی مرض میں مبتلاہو جائے جس کے صحت مند ہونے کے اثرات ختم ہو جائیں اور ڈاکٹر و حکیم بھی اسے  لا علاج قرار دے دیں تو پھردین اس کے فدیہ کا حکم دیتا ہے اور فدیہ یہ ہے کہ ایک مسکین کو دو وقت کا کھانا کھلانا یا ہر روزے کے بدلے ۲ کلو گندم یا ۲ کلو گندم کی قیمت ادا کرے۔

   اگر کوئی شخص جان بوجھ کر روزہ توڑدے مثلاً کھا لیا، پی لیا یا جماع کر لیا وغیرہ تواس کے لیے لازم ہے کہ:

ایک غلام آزاد کرے یا 60 مسکینوں کو کھانا کھلائے  یا 2  ماہ یعنی 60 روزے لگاتار رکھے۔

کوئی ایک بھی جزو پوراکرنے سے کفارہ ادا ہو جائے گا۔