حق مہر

شرع میں حق مہر عورت کا حق ہے جو کہ شوہر پر فرض کیا گیاہے۔ مہر کی رقم ادا کیے بغیر نکاح کرنا یا رشتہ ء ازدواج قائم رکھنا شرعاً حرام ہے۔ جہاں تک حق مہر کی ادائیگی کا تعلق ہے تو حق مہر کی مختلف اقسام ہیں۔

(۱) معجّل (۲) غیر معجّل (۳) عندالطلب

معجّل:۔ حق مہر کی وہ قسم ہے جو نکاح کے وقت ادا کرنا ضروری ہوتاہے۔ اس کی ادائیگی کے بغیر رشتہء ازدواج قائم نہیں کیا جا سکتا۔

غیر معجّل:۔ حق مہر کی وہ قسم ہے جو نکاح اور رشتہء ازدواج قائم کرنے کے بعد کسی بھی وقت ادا کیا جا سکتا ہے۔

عندالطلب:۔ یہ وہ قسم ہے جس میں بیوی کی طلب کو ملحوظ خاطر رکھا جاتا ہے۔ یعنی عورت جب حق مہر طلب کرے اس وقت حق مہر کی ادائیگی ضروری ہوتی ہے۔

حدیث کی رو سے، ُام المو منین حضرت عائشہ صدیقہ ؓ سے روایت ہے کہ حضور ﷺ کا مہر ازواج مطہرات کے لیے ساڑھے بارہ اوقیہ تھا، یعنی پانچ سو درہم۔

مرد عورت کو مہر سے دستبردار ہونے کے لیے دباؤ نہیں ڈال سکتا۔

عورت اپنے مہر کی رقم مرد کو اُدھار دے سکتی ہے اور اس کے کاروبار میں حصہ بھی ڈال سکتی ہے۔ جیسا کہ حدیثِ مبارکہ میں ہے کہ اگر عورت اپنے مہر کی رقم مرد کے کاروبار میں شامل کرے تو اللہ پاک اس میں برکت پیدا کرتا ہے۔